ناسا: اسٹیرائیڈ 11,200 میل فی گھنٹہ کی سپیڈ سے زمین کی جانب آرہا ہے

امریکی تحقیقی ادارے ناسا نے تنبیہ کی ہے کہ نیویارک کی ایمپائراسٹیٹ بلڈنگ سے بھی حجم میں بڑا ایک اسٹیرائیڈ بہت سرعت سے ہماری زمین کی جانب بڑھ رہا ہے۔

ادارے نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ایک ایسے اسٹیرائیڈ کا پتا لگا گیا ہے جو کہ نیویارک کی ایمپائراسٹیٹ بلڈنگ سے بھی حجم میں بہت بڑا ہے اور حالیہ ہفتے میں 6 جون کو ارتھ کے قریب پہنچے گا ۔

تحقیقی ادارے نے کہا ہے کہ اسٹیرائیڈ 11،200 میل فی آور کی سپیڈ سے زمین کی جانب آرہا ہے جوسائز میں بہت زیادہ لمبا ہوسکتا ہے۔

ایجنسی کی انتظامیہ نے اس ٹکڑے کو 163348(2002 این این 4) کا سائنسی نام رکھا ہے۔

تحقیق دانوں نے اندارہ لگایا ہے کہ اسٹیرائیڈ زمین سے نہیں ٹکرائے گا- اگر اسٹیرائیڈ زمین کے مدار میں داخل ہوتا ہے تو اس صورت میں ہم اس پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں