پی کے 8303 حادثہ میں کاک پٹ کریو اور ٹریفک کنٹرولر ذمہ دار قرار

لاہور سے کراچی جانے والی قومی ایئر لائن پی آئی اے کی پرواز پی کے 8303 کی عبوری تحقیقاتی رپورٹ پیش کی گئی ہے- مرتب کی گئی رپورٹ کے مطابق ایئر ٹریفک کنٹرولر اور کاک پٹ کریو کو حادثے کا ذمہ دار ٹھہرایا گیا ہے-

یہ بھی پڑھیں: طیارہ حادثہ تحقیقات میں نئے انکشافات

طیارہ حادثہ، تین ماہ میں تحقیقات مکمل ، معاوضہ بھی دیا جائیگا۔ غلام سرور خان

ذرائع کے مطابق تحقیقات میں پی آئی اے اور سول ایویشن کے اداروں کی حادثات کی روک تھام  کے لئے کیے گئے اقدامات کو ناکافی قرار دیا گیا ہے- یہ رپورٹ انویسٹیگیشن بورڈ کے صدر نے وزیر سول ایویشن کے حوالے کی ہے-

جہاز تکنیکی طور پر مکمل محفوظ تھا، سی ای او ارشد ملک

مزید تفصیلات کے مطابق کاک پٹ کریو اور ٹریفک کنٹرولر پر حادثے کی ذمہ داری بنتی ہے جب کہ طیارے میں  فنی خرابی کو بھی خارج از امکان قرار نہیں دیا گیا اور اس سلسلے میں مزید تحقیق جاری ہے جب کہ طیارے کے مختلف آلات، فلائٹ ڈیٹا کنٹرول، سینسرز اور بلیک باکس کے متعلق تحقیقات بھی تا حال رپورٹ میں شامل نہیں کی گئی ہیں- اور اس سلسلے میں حتمی رپورٹ کا انتظار ہے-

 یاد رہے کہ پی آئی اے کی لاہور سے کراچی جانے والی پرواز لینڈنگ سے پہلے حادثے کا شکار ہوگئی تھی اور اس میں سوار 97 افراد جان کی بازی ہار گئے تھے جبکہ دو افراد معجزانہ طور پر محفوظ رہے تھے- بعد کی تفصیلات کے مطابق طیارے نے لینڈنگ کی کوشش کی تھی اور رن وے سے رگڑ بھی کھائی تھی-  

اپنا تبصرہ بھیجیں