کروڑوں ڈالرز کے چینی معاہدوں پر عملدرآمد معطل، مہاراشٹرا گورنمنٹ

بھارت اور چین کے ساتھ سرحدی کشیدگی اور متعدد فوجیوں کی ہلاکت کے بعد ریاستی سطح پرچین کے ساتھ مختلف پراجیکٹس پر کام نہ کرنے کا اعلان کیا گیا ہے اور چین کے ساتھ کئے گئے کروڑوں ڈالر کے معاہدوں پر فی الحال کام روک دیا گیا ہے-

بھارتی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھنے والی مہاراشٹرا گورنمنٹ نے اعلان کیا ہے کہ وہ چینی کمپنیوں سے کیے گئے معاہدوں کی توثیق کے لیے وفاقی حکومت کی جانب دیکھ رہے ہیں-

ان میں سے کچھ ایسے معاہدے بھی ہیں جو کہ بھارتی فوجیوں کی ہلاکت سے ایک دن پہلے ہی ریاستی حکومت اور چینی کمپنی کے درمیان ہوئے تھے-

 سب سے بڑا معاہدہ چینی کار ساز کمپنی گریٹ وال موٹرز اور مہاراشٹر گورنمنٹ کے درمیان ہوا تھا جس کے تحت چینی کمپنی نے انڈین مارکیٹ اور بین الاقوامی ایکسپورٹ کے لیے گاڑیوں کی پروڈکشن شروع کرنی تھی-

واضح رہے کہ سوشل میڈیا پر بھی چینی مصنوعات کے خلاف مہم دیکھنے میں آئی تھی، لیکن ماہرین کے مطابق ایسا بائیکاٹ انڈین معیشیت کیلیے بالکل بھی سودمند نہیں ہے- 

اپنا تبصرہ بھیجیں