امریکہ میں کورونا وائرس کے متاثرین میں ریکارڈ اضافہ، کاروبار زندگی بدستور معطل

ریاستہائے متحدہ امریکہ میں ایک دن کے دوران کرونا وائرس کے ریکارڈ متاثرن رپورٹ ہوئے ہیں جس کے صورتحال کو دیکھتے ہوئے بعض ریاستوں نے معمولاتِ زندگی بحال کرنے کا عمل جزوی طور پر معطل کر دیا ہے۔ جبکہ شہریوں کی جانب سے بھی کاروبار زندگی کھولنے پر تشویش کا اظہار کیا جارہا ہے-

ملک میں بروز جمعرات کو 39 ہزار 819 اشخاص میں کورونا وائرس کی رپورٹ پازیٹو آئی ہے۔ ان اعدادوشمار کو دیکھا جائے تو ایک دن کے دوران نئے متاثرین کی یہ اب تک کی سب سے زیادہ تعداد ہے۔ 24 گھنٹوں کے دوران آنے والے ان متاثرین کے بعد کورونا کیسز میں کمی کے اندازے غلط ثابت ہوئے ہیں-

اس سے پہلے بدھ کو بھی ملک میں 36 ہزار سے زیادہ مریض سامنے آئے تھے۔ اور مریضوں کی تعداد روز بروز بڑھتی جارہی ہے-

حالیہ ہفتے میں ریاست ایریزونا، کیلی فورنیا، واشنگٹن، فلوریڈا، میزوری، نیواڈا، جنوبی کیرولائنا، اوکلاہوما اور الاباما میں ریکارڈ متاثرین رپورٹ ہو رہے ہیں۔ اور ان ریاستوں میں ہنگامی حالت نافذ ہے-

جبکہ دوسری طرف کووڈ 19 کے مریضوں میں اضافہ ٹیسٹس کی صلاحیت بڑھانے کو بھی قرار دیا جا رہا ہے۔ جس کے مطابق اب ریکارڈ تعداد میں ٹیسٹنگ ہورہی ہے-

واضح رہے کہ ٹرمپ حکومت کرونا وائرس کے پھیلاؤ سے متعلق امریکی عوام میں پائے جانے والے خدشات کو کم کرنے کی کوششں بھی کر رہی ہے۔ لیکن 15 سے زائد ریاستوں میں نئے  متاثرین کی تعداد میں تشویش ناک اضافے سے امریکہ میں کاروبارِ زندگی کی بحالی کی صدر ٹرمپ کی کاوشوں کو ٹھیس پہنچی ہے- حالیہ اعدادوشمار کے بعد معاشی سرگرمیاں کھولنا محال نظر آتا ہے-

اپنا تبصرہ بھیجیں