دبئی میں آم لیمبرگینی میں فروخت، شہری حیران

یو اے ای کی ریاست دبئی میں پھلوں کے بادشاہ آم کو دنیا کی مہنگی اور تیز رفتار گاڑی لیمبرگینی میں فروخت نے لوگوں کو حیران کردیا ہے- تفصیلات کے مطابق دبئی میں فروٹ کنگ آم کی فروخت لیمبرگینی میں کی جارہی ہے- دبئی میں پاکستانی امپورٹرز گلریز یاسین اور محمد جہانزیب نے بتایا ہے کہ دوسرے درآمد کنندگان کے برعکس ان کے پاس آموں کی مختلف اور بہترین اقسام فروخت کیلیے موجود ہیں۔

درآمد کنندگان نے متحدہ عرب امارات حکومت کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ائیر کارگو کی اجازت ملنے سے ہمیں بہت فائدہ ہوا ہے اور آم بروقت امپورٹ ہو رہا ہے جو کہ بہت اچھا اقدام ہے اسی طرح اب ہمارے پاس آموں کی مختلف اقسام فروخت کیلیے موجود ہیں جن میں قابل ذکر سندھری، لنگڑا، چونسا اور سلور بھی سٹاک میں موجود ہے، جبکہ ہمارے پاس وہی آم کی کوالٹی اور اقسام موجود ہیں جو پاکستان میں فروخت کے لیے پیش کیے جارہے ہیں۔

ٹریڈرز نے کہا ہے کہ لاک ڈاؤن اور کرونا وبا کے باعث آم کی درآمد میں لاگت زیادہ آرہی ہے پھر بھی ہم نے اسی تناظر میں ایک انوکھا طریقہ اپنایا ہے اور لیمبرگینی میں مینگو کی فروخت شروع کی جس سے شہری اور بچے میں تجسس پیدا ہوا ہے اور آموں کی فروخت بھی میں نمایاں اضافہ ہوا ہے۔

پاکستانی آم کو بیش قیمت گاڑی میں فروخت کرنے والے شہری نے بتایا کہ اس انوکھی ڈیلیوری سروس سے ہمیں فائدہ یہ ہوا ہے کہ پاکستانی ہی نہیں بلکہ دوسرے ممالک کے افراد بھی آموں کی اس سیل پر حیران رہ گئے ہیں اور یہ بات سوچ رہے ہیں پاکستانی آموں میں ایسی کیا خاص چیز ہے جو انہیں لیمبرگینی جیسی گاڑی میں فروخت کیلیے پیش کیا جارہا ہے- ہمیں مستقبل میں آموں کی فروخت میں نمایاں اضافہ ہونے کی امید بھی ہے-

اپنا تبصرہ بھیجیں