20,000 ریال ٹریفک جرمانوں پر کیا ایکشن لیا جا سکتا ہے؟

مملکت سعودی عرب میں محکمہ ٹریفک نے چالان 20,000 ریال تک پہنچنے پر وارننگ نظر انداز کرنے والے افراد کے کیسز کو عدالت کے سپرد کرنے کا فیصلہ کیا ہے-ادارے کے مطابق ایسے قانون شکن افراد کے خلاف عدالتی کاروائی عمل میں لائی جائے گی اور جاری کردہ اصول و ضوابط کے مطابق نبٹا جائے گا-

ادارے نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ مسلسل خلاف ورزی کرنے والے عادی سعودی شہریوں اور مقیم غیر ملکیوں کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے گا اور ایسے قانون شکن افراد کے خلاف گھیرا تنگ کرتے ہوئے انہیں ضابطہ کار میں لائے جائے گا اگر ان افراد پر نافذ کیے گئے ٹریفک جرمانوں کی مجموعی مالیت 20,000 ریال تک پہنچ گئی اور جاری کی گئی تنبیہ اور ادائیگی کے نوٹس نظر انداز کرنے اور توجہ نہ دینے پر انہیں عدالت کے ذریعے طلب کیا جائے گا۔

نیوز ایجنسی اخبار 24 کے مطابق ادارے نے بتایا کہ 20000 ریال تک خلاف ورزیوں والے ڈرائیورز کو نہ صرف کورٹ میں طلب کیا جائے گا اس کے ساتھ ساتھ ایسے ڈرائیورز کی مرور سروسز بھی بند کردی جائیں گی- اور نافڈ کیے گئے جرمانوں کی ادائیگی کیلیے ایک ماہ کی مہلت بھی دی جائی گی-

اپنا تبصرہ بھیجیں